[ ماہنامہ دختران اسلام ] [ سہ ماہي العلماء ]      

   سرورق
   ہمارے بارے
   تازہ شمارہ
   سابقہ شمارے
   مجلس ادارت
   تازہ ترین سرگرمیاں
   خریداری
   تبصرہ و تجاويز
   ہمارا رابطہ



Google
ماہنامہ منہاج القرآن > مارچ 2008 ء > اجلاس مرکزی مجلس شوریٰ تحریک منہاج القرآن
ماہنامہ منہاج القرآن : مارچ 2008 ء
> ماہنامہ منہاج القرآن > مارچ 2008 ء > اجلاس مرکزی مجلس شوریٰ تحریک منہاج القرآن

اجلاس مرکزی مجلس شوریٰ تحریک منہاج القرآن

رپورٹ : ناصر اقبال ایڈووکیٹ/ محمد قدیر علی

تحریک منہاج القرآن کی مرکزی مجلس شوریٰ کا اجلا س مورخہ 9، 10 فروری 2008ء مرکزی سیکرٹریٹ میں منعقد ہوا جس کی صدارت مرکزی امیر تحریک محترم صاحبزادہ فیض الرحمن درانی نے کی۔ اجلاس میں ناظم اعلیٰ محترم ڈاکٹر رحیق احمد عباسی، نائب ناظم اعلیٰ محترم شیخ زاہد فیاض، امیر پنجاب محترم احمد نواز انجم، سیکرٹری جنرل پاکستان عوامی تحریک محترم انوار اختر ایڈووکیٹ سمیت جملہ ناظمین، سربراہان شعبہ جات و مرکزی قائدین اور ملک بھر سے تحریک کی ذیلی تنظیمات کے صدور نے خصوصی شرکت کی۔ تلاوت و نعت رسول کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ساتھ مرکزی مجلس شوریٰ تحریک منہاج القرآن کا باقاعدہ اجلاس ہوا۔

ناظم اعلیٰ تحریک منہاج القرآن محترم ڈاکٹر رحیق احمد عباسی نے ہاؤس کو ایجنڈا کی مختصر بریفنگ دی جس کی تفصیل درج ذیل ہے۔

1۔ میلاد مہم 2008ء

ناظم اعلیٰ نے میلاد مہم کے مقاصد پر روشنی ڈالتے ہوئے بتایا کہ تحریک منہاج القرآن فروغ عشق رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے عظیم مقصد کے لئے محبت و ادب و تعظیم رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم، اطاعت رسول، نصرتِ دین رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ساتھ ساتھ میلا د مہم کو تحریک سے وابستگی، دعوت کے فروغ اور زیادہ سے زیادہ رفاقت سازی کے لئے بھی چلانا چاہتی ہے۔ مینار پاکستان کے سائے تلے ہونے والی عالمی محفل میلاد ہماری معلومات کے مطابق دنیا کی سب سے بڑی محفل میلاد ہوتی ہے لہٰذا امسال اعتکاف میں فیلڈ تنظیمات کی مشاورت سے فیصلہ کیا گیا کہ لاہور کے علاوہ چار دیگر مقامات پر بھی بیک وقت عالمی محفل میلاد کے اجتماعات منعقد کئے جائیں گے جو ٹیلیفون یا ٹیلی ویژن کے ذریعے مینار پاکستان پر ہونے والی عالمی میلاد مصطفےٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کانفرنس سے منسلک ہوں گے۔ اس فیصلہ پر عملدرآمد کے لئے سنٹرل ایگزیکٹو کونسل CEC کے اجلاس منعقدہ 18 نومبر2007ء میں ماڈل سٹیز کے نمائندوں نے خصوصی شرکت کی اور لاہور کے علاوہ تین مقامات (راولپنڈی، بھکر اور لاڑکانہ) پر عالمی میلاد کانفرنس کے اجتماعات کرانے کا فیصلہ کیا گیا۔ ملک میں امن و امان کی بگڑتی ہوئی صورت حال، دہشت گردی اور خود کش حملوں کے لامتناہی سلسلہ کے دیکھتے ہوئے سنٹرل ورکنگ کونسل CWC نے اپنے اجلاس مورخہ 2 جنوری 2008ء میں فیصلہ کیا کہ امن و امان کی بگڑتی ہوئی صورت حال، دہشت گردی اور خود کش حملوں کے پیش نظر لاہور کے علادہ دیگر علاقو ں میں ہونے والے اجتماعات منسوخ کردئے جائیں۔ مرکزی پروگرام بھر پور طریقے سے مینار پاکستان پر ہی کروانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ لہذا مرکزی محفل میلاد کا اہتمام انتہائی تزک و احتشام سے کیا جائے گا اور پاکستان و آزاد کشمیر کی تمام تنظیمات اس محفل میں بھرپور شرکت کریں گی۔

بعد ازاں شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہرالقادری نے اراکین مجلس شوریٰ سے ٹیلیفونک خطاب فرمایا :

خطاب شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہرالقادری

’’عالمی میلاد کانفرنس ایک کیریکٹر بن چکی ہے، اس کے کامیاب انعقاد سے حضور علیہ الصلوٰۃ والسلام خوش ہوں گے لہٰذا پہلے سے زیادہ محنت کریں کیونکہ اس کانفرنس کے ذریعے تحریک کے دبدبہ اور قوت کا اظہار ہوگا۔ اس وقت ماحول میں بیزاری کا تاثر پایا جاتا ہے اسے تحریک کے حق میں Motivation کا ذریعہ بنائیں۔ نئے و پرانے رفقاء کو تنظیمی ذمہ داریاں دے کر تحریکی دھارے میں شامل رکھیں۔ دعوت کاسلسلہ حالات کی وجہ سے ٹوٹنے نہ دیں۔ دعوت بذریعہ کیسٹ کو ہر حال میں فروغ دیں اور دئیے گئے تمام Modules حالات کے مطابق اپنائیں۔

اس سال کو عوامی شعور کی بیداری کا سال Declare کریں۔ نوجوانوں اور خواتین کا سال Declare کریں۔ ہر سطح پر تنظیمی عہدیداران کی تربیت کا سال Declare کریں۔ Tri Dimentional Training کریں۔۔۔ فکری و نظریاتی تربیت۔۔۔ روحانی و اخلاقی تربیت۔۔۔ تنظیمی وانتظامی تربیت۔

منہاج العمل کو اپنی زندگی کا منشور بنالیں۔ ایک تربیت یافتہ آدمی 100 غیر تربیت یافتہ افراد پر بھاری ہو تا ہے۔ تربیت ہمارا اسلحہ ہے۔ تنظیمی تربیت کے کیمپس بکثرت کریں، Organizational Approach سیکھیں۔ ایام بیض کے روزے رکھنا اپنا کلچر بنا لیں، ان دنوں میں تحریکیوں کے گھرانے رمضان المبارک کا سا ماحول پیدا کریں۔ مساکین و یتامیٰ سے محبت کریں، اخلاق تقویٰ، پرہیزگاری کو اپنا شعار بنائیں‘‘۔

سلامتی کی دعاؤں اور ملک بھر کے کارکنان کو سلام کے ساتھ آپ نے گفتگو کا اختتام فرمایا۔

2۔ الیکشن پالیسی 2008ء

ناظم اعلیٰ تحریک منہاج القرآن محترم ڈاکٹر رحیق احمد عباسی نے اجلاس کے دوسرے پوائنٹ تحریک کی الیکشن پالیسی کی بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ الیکشن کے حوالے سے ہمارا فیصلہ قوم کی امنگوں کے عین مطابق ہے، ابھی قوم کو نظام کے خلاف اٹھانے کے لئے بہت محنت کی ضرورت ہے، انقلاب کے لئے موجودہ نظام سے لوگوں کی کلیتاً مایوسی ضروری ہے امید ہے کہ یہ الیکشن قوم کو نظام انتخابات سے مزید مایوس کریں گے۔ ہماری موجودہ الیکشن پالیسی کی دو بنیادیں ہیں۔ اولاً : اپنے آپ کو اس گندگی سے بچا کر اپنے وسائل اور صلاحیّتوں کو محفوظ رکھنا۔ ثانیاً : کارکنوں کو انتشار سے بچانا۔

بعد ازاں محترم امجد علی قادری (صفدر آباد)، محترم عمران صابری (صدر یوتھ عزیز بھٹی ٹاؤن)، محترم آصف جاوید (صدر یوتھ شیخوپورہ)، محترم چوہدری رشید حسین ایڈووکیٹ (صدرشکر گڑھ)، محترم چوہدری ذوالفقار علی ایڈووکیٹ (حجرہ شاہ مقیم)، محترم میاں عبدالقادر (فیصل آباد)، محترم مجاہد حسین کاظمی (ایبٹ آباد) اور محترم اختر علی قادری (نارووال) نے الیکشن پالیسی کے حوالے سے اظہار خیال کیا۔

3۔ ششماہی کارکردگی رپورٹس

اجلاس مجلس شوریٰ میں نائب ناظم اعلیٰ محترم شیخ زاہد فیاض نے فیلڈ کی نظامتوں کی ششماہی کارکردگی (جولائی تا دسمبر2007ء) ہاؤس کے سامنے پیش کیں جن میں تحریک منہاج القرآن پنجاب، سندھ، کراچی، سرحد، بلوچستان اور آزاد کشمیر کی تنظیمات نے ریگولر رفاقت، کارکنان، تحصیلی تنظیمات، UC تنظیمات، CD Exchange، حلقہ درود، ماہانہ درس قرآن، تربیتی کیمپس اور تنظیمی دفاتر کے حوالے سے ششماہی کارکردگی ہاؤس میں پیش کی۔ اس موقع پر مختلف تنظیمات نے گذشتہ چھ ماہ میں کئی گئی سرگرمیوں کے حوالے سے اظہار خیال کیا۔

بعد ازاں منہاج القرآن ویمن لیگ نے درج بالا سرگرمیوں کے علاوہ ویڈیو پروگرامز، کارکن سازی، تربیتی ورکشاپس، لٹریچر سازی، اور تنظیمی دورہ جات کے ساتھ ساتھ دیگر سرگرمیوں کے حوالے سے ہاؤس کو بریف کیا۔

اس موقع پر نظامت یوتھ نے بھی مذکورہ سرگرمیوں کے علاوہ یونیورسٹی، کالج، سکول سطح کی تنظیم سازی، ویڈیو پوائنٹس، رزلٹ کیمپس، قائد انقلاب کے ٹیلیفونک خطابات، عید ملن پارٹیز، ماہانہ محافل (تحصیلات) اور سیمینارز کے متعلق آگاہ کیا۔

4۔ سی ڈی ایکسچینج

شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہرالقادری نے انقلاب دعوت اور دعوت بذریعہ کیسٹ کا نعرہ ہمیں دیا تھا، جس کو عملی جامہ پہنانے کے لئے سی ڈی ایکسچینج کا پراجیکٹ Launch کیا گیا۔ اب تک دستیاب ریکارڈ کے مطابق791سی ڈی ایکسچینج فیلڈ میں بھجوائے جاچکے ہیں جن سے عوام الناس کو کماحقہ مستفید کرنے کے لئے مرکز پر نظامت تربیت کے تحت باقاعدہ سی ڈی ایکسچینج سیل کا قیام عمل میں لایا جا چکا ہے۔ اس سیل کے تحت ابھی فی الحال مزید نئے سی ڈی ایکسچینج قائم نہیں کئے جائیں گے بلکہ پہلے سے قائم 791 سی ڈی ایکسچینج کی کارکردگی کو مزید بہتر بنایا جائے گا۔

ہاؤس کو بتایا گیا کہ دعوت بذریعہ کیسٹ ایک وسیع پراجیکٹ ہے جسے سی ڈی ایکسچینج تک محدود نہیں کیا جانا چاہئے لہٰذا اس پراجیکٹ میں باقاعدہ طور پر ویڈیو پروگرام، پروجیکٹرز پروگرام، سی ڈی سیل سنٹر، سی ڈی لائبریری، کیبل نیٹ ورک، QTV کے خطابات کا اجتماعی سنوانا، بسوں میں Cd's چلوانا، حلقہ ہائے درود میں ویڈیو پروگرامز، موبائل سیل سنٹر اور مخیّر حضرات کے تعاون سے فری سی ڈیز کی تقسیم کو شامل کیا جارہا ہے۔

5۔ ممبرشپ کی مجموعی کارکردگی

اجلاس میں ممبر شپ کی مجموعی کارکردگی کو بھی زیر بحث لایا گیا اور اس میں مزید پیش رفت کے لئے مناسب سرگرمیوں اور اقدامات کا جائزہ لیا گیا۔

رفاقت سازی کا لائحہ عمل

ناظم اعلیٰ نے رفاقت سازی، ڈیفالٹرز کی بحالی اور کارکن سازی کے لئے اہم نکات کی بریفنگ دی اور لائحہ عمل ھاؤس کے سامنے پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ مرکز سے رفقاء تک مجلہ محفوظ اور جلد پہنچانے کا ایک ہی ذریعہ ہے کہ تنظیمات زیادہ سے زیادہ مجلہ اجتماعی طور پر منگوا لیں اور خود تقسیم کریں۔ ہم پہلے ہی اس نظام کو 200 مقامات پر Excercise کر رہے ہیں۔ 30 سے زائد مجلہ کا پارسل رجسٹرڈ بھجوایا جاسکتا ہے، لہٰذا تنظیمات اس سلسلہ میں مرکز کے ساتھ تعاون کریں، اس عمل سے تنظیمات کو رفقاء کے ساتھ رابطہ کرنے اور زرتعاون جمع کرنے میں آسانی بھی ہوگی۔

رفاقت سازی کے لائحہ عمل کے دونمایاں پہلو ہیں۔

الف) موجودہ ریگولرز کوMiantain کرنا
ب) ڈیفالٹر شپ روکنا

اس سلسلہ میں درج ذیل Line of action دی جارہی ہے۔

  • یونین کونسل سطح تک ناظم مالیات زرتعاون کی کولیکشن کا ذمہ دار ہوگا۔
  • ہر یونین کونسل میں رفاقت کا رجسٹر رکھا جائے گا جس میں یونین کونسل وار رفقاء کا اندراج ہوگا۔ بالائی تنظیم اس رجسٹر کا وزٹ کے دوران معائنہ کیا کرے گی یہ رجسٹر پنجاب آفس سے پرنٹڈ شکل میں دستیاب ہے۔
  • تحصیلی تنظیم رفقاء کا ریکارڈ یونین کونسل سطح تک Maintain کرے گی اور اس کی ایک کاپی مرکز کو فراہم کرے گی، مرکز بھی اپنے Data base کو UC سطح تک Up date کرے گا۔
  • مرکز سے ڈیفالٹر ہونے والے رفقاء کو دو ماہ تک مجلہ کے ساتھ ریمائنڈر بھجوایا جائے گا۔
  • ڈیفالٹر شپ میں اضافہ کی وجوہات کا جائزہ لے کر اصلاح طلب پہلوؤں پر زیادہ زور دیا جائیگا۔ جن میں مشن اور نظریہ کی دعوت دیئے بغیر رفاقت سازی کرنا اور رفاقت سازی مہمات میں اہداف حاصل کرنے کے لئے اپنے پاس سے زرتعاون جمع کرانا شامل ہے۔
  • رفقاء کو منہاج العمل کی پابندی کرائی جائے گی، اس میں زرتعاون باقاعدہ ادا کرنے کی ترغیب موجود ہے۔
  • آئندہ آنے والے مہینوں میں ڈیفالٹرز سے رابطہ کرکے انہیں بحال کیا جائے گا۔ اس میں نزولی ترتیب کا خیا ل رکھا جائے گا یعنی 2007ء میں ڈیفالٹر ہونے والے رفقاء سے رابطہ کا آغاز کیا جائے گا اور تدریجاً 2003ء کے ڈیفالٹر رفقاء تک رابطہ کیا جائے گا۔ اس کے بعد اس سے قبل کے رفقاء سے رابطہ کیا جائے گا۔ اس ترتیب سے رابطہ کرنے سے رفقاء جلد بحال ہوں گے اور ڈیفالٹر شپ کی شرح میں کمی واقع ہوگی۔
  • زیادہ سے زیادہ لائف ممبرز بنانے کی کوشش کی جائے۔
  • نئی رفاقت سازی کے سلسلہ میں ماہِ میلاد میں گزشتہ برس کی طرح مہم چلائی جائے گی اور حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ولادت کے دن کی مناسبت سے 12000 نئے رفقاء بنائے جائیں گے۔
  • ملک بھر کی 50 منتخب تحصیلات میں نئے لوگوں کی شمولیت کے کنونشنز منعقد کئے جائیں گے۔
  • نظامت دعوت کے تحت ملک بھر میں ہونے والے دروس قرآن میں مبّلغین رفاقت کی دعوت دیں گے۔

6۔ کارکن سازی

کارکن سازی کے لئے تنظیمی ڈھانچہ کا یونین کونسل سطح تک قیام اور دیگر دعوتی پراجیکٹس قائم کئے جائیں گے جن کی تفصیل درج ذیل ہے۔

  • تحصیل سطح پر200 تحصیلوں میں تحریک منہاج القرآن اور اس کے تمام فورمز کی مکمل تنظیم سازی کی جائے گی۔ تحصیلی باڈی میں عہدیداران کی درج ذیل تعداد ہے۔ تحریک کی تنظیم 200 تحصیلوں میں مکمل کی جائے گی جبکہ فورمز اس سلسلہ میں اپنا ٹارگٹ خود طے کریں گے۔ تحریک منہاج القرآن 10، نظامت یوتھ11، ویمن لیگ8 اور علماء کونسل6۔ اس طرح تمام فورمز کی 200 تحصیلوں میں تنظیمات قائم ہوں گی۔
  • یونین کونسل کی سطح پر 1000 یونین کونسلوں میں تنظیم سازی کی جائے گی، تحریک کا ٹارگٹ 1000 یونین کونسلز ہوگا جبکہ فورمز اپنا ٹارگٹ خود طے کریں گے۔ یونین کونسل سطح کی باڈی میں عہدیداران کی تعداد تحریک منہاج القرآن 8، نظامت یوتھ5، ویمن لیگ5 ہوگی۔
  • ہر یونین کونسل میں ایک سی ڈی ایکسچینج قائم کیا جائے گا، سی ڈی ایکسچینج میں انچارج اور 5 داعیین پر مشتمل 6 افراد کی ٹیم بنتی ہے۔ جہاں یوتھ لیگ اور ویمن لیگ کی تنظیمات موجود نہیں ہیں وہاں تحریک کی تحصیلی تنظیم ان فورمزکی تنظیمات قائم کرے گی۔
  • حلقہ درود کا اس سے قبل کوئی سیٹ اپ فیلڈ میں موجود نہیں ہے اگرچہ بہت سی جگہوں پر حلقہ ہائے درود چل رہے ہیں۔ حلقہ درود 5 اراکین پر مشتمل باڈی قائم کی جائیگی۔
  • ویڈیو پروگرا م کا سیٹ اپ بھی فیلڈ میں قائم کیا جائے گا۔ اور فی سیٹ اپ 3 کارکن ہوں گے۔
  • فیلڈ میں دروس عرفان القرآن کے انتظامات کے لئے درس عرفان القرآن کونسلزقائم ہیں جن میں 10-15 افراد کام کرتے ہیں۔ یہ کونسلز آئندہ باقاعدہ رجسٹرڈ کی جائیں گی اور یہ کونسلزاوسطاً11 افراد پر مشتمل ہوں گی۔ اس وقت 200 سے زائد مقامات پر دروس ہو رہے ہیں۔
  • ویمن لیگ کے حلقہ ہائے دروداس وقت 500 مقامات پر چل رہے ہیں، ہر حلقہ درود کی 3 رکنی باڈی بنائی جائے۔
  • ویمن لیگ کے حلقہ ہائے عرفان القرآن 100 مقامات پر چل رہے ہیں، ان حلقہ جات کی 5 رکنی تنظیم قائم کی جائے۔

درج بالا لائحہ عمل اپنانے سے ہمیں ہر سطح پر کارکنان کثیر تعداد میں دستیاب ہوں گے۔

بعد ازاں اس حوالے سے محترم مجاہد حسین کاظمی (ایبٹ آباد)، محترم ڈاکٹر محمد یٰسین (تاندلیانوالہ)، محترم رائے محمد اقبال کھرل(صفدر آباد)، محترم اختر علی قادری ( نارووال)، محترم حافظ نیاز احمد (پرنسپل تحفیظ القرآن)، محترم امتیاز احمد (میرپور)، محترم ساجد گوندل ( ملک وال)، محترم اورنگ زیب (استور شمالی علاقہ جات)، محترم محمد عمران (صدر یوتھ PP-70 فیصل آباد)، محترم محمد اکبر سعیدی (صدر تحصیل جتوئی)، پروفیسر ذوالفقار علی (امیر لاہور) اور فریحہ سراج (صدر ویمن لیگ گوجرانوالہ) نے کارکن سازی اور دیگر امور سے متعلقہ اظہار خیال کیا۔

  • اجلاس میں محترم قیصر اقبال قادری (امیر کراچی) نے کراچی تنظیم کی کارکردگی ہاؤس کے سامنے پیش کی جس کے مطابق بن قاسم ٹاؤن میں ایک مسجد کی تعمیر کے لئے خطیر رقم کا تعمیراتی سامان عطیہ کیا گیا، شاہ لطیف ٹاؤن میں 3 اسلامک سنٹرز کے لئے زمین حاصل کی گئی ہے، جن میں سے ایک اسلامک سنٹر90 لاکھ کی مالیت سے تکمیل کے مراحل میں ہے۔ ملیر ٹاؤن میں عظیم ڈائیگناسٹک سنٹر کے نام سے ایک میڈیکل کمپلیکس تحریک کو عطیہ ملا ہے۔ کراچی میں سوا کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والا ویمن شریعہ کالج قائم ہوچکا ہے۔ سچل ٹاؤن مین 15 لاکھ روپے کی مالیت کا مرکز خریدا گیا ہے۔ لیاری ٹاؤن میں 31 لاکھ روپے کی لاگت سے 300 مربع گز پر محیط مرکز خریدا گیا ہے۔ بلدیہ ٹاؤن میں قائم سکول کی 3 لاکھ روپے سے Renovation کی گئی ہے اور 600 مربع گز پر مسجد تعمیر کی گئی ہے۔ اورنگی ٹاؤن میں بھی ایک سکول قائم کیا گیا ہے۔ گلشن اقبال ٹاؤن میں 80 لاکھ روپے کی مالیت سے صوبائی مرکز خریدا گیا ہے اور اسے منی سیکرٹریٹ بنایا گیا ہے۔
  • اجلاس میں نارووال تنظیم اور شاہ لطیف ٹاؤن کراچی تنظیم کو اپنے ششماہی اہداف مکمل کرنے پر سندِ حسنِ کارکردگی اور مالی انعام کا چیک پیش کیا گیا۔ نارووال تنظیم کی طرف سے محترم اختر علی قادری نے اور شاہ لطیف ٹاؤن کی طرف سے محترم قیصر اقبال قادری نے اسناد اور چیک وصول کیا۔
  • میلاد میں نئی رفاقت سازی کا ذکر کیا گیا ہے اس سلسلہ میں فورمز کو درج ذیل ٹارگٹس دیئے گئے۔
  • تحریک 8000، ویمن لیگ 2000، یوتھ 1500، علماء کونسل 500 (ٹوٹل 12000)
  • نئی رفاقت سازی کے کنونشنز کے لئے ملک بھر کی منتخب تحصیلات کو اپریل، مئی اور جون کے مہینو ں میں پروگرامز دیئے جا رہے ہیں۔

^^ اوپر چليں ^^

^^ فہرست ^^

 << پچھلا صفحہ <<

>> اگلا صفحہ >>


This page was published on May 2, 2008



کاپی رائٹ © 1980 - 2017 ، منہاج انٹرنیٹ بیورو، جملہ حقوق محفوظ ہیں۔
Web Developed By: Minhaj Internet Bureau