[ ماہنامہ دختران اسلام ] [ سہ ماہي العلماء ]      

   سرورق
   ہمارے بارے
   تازہ شمارہ
   سابقہ شمارے
   مجلس ادارت
   تازہ ترین سرگرمیاں
   خریداری
   تبصرہ و تجاويز
   ہمارا رابطہ



Google
ماہنامہ منہاج القرآن > جولائی 2008 ء > نعت بحضور سرورِ کونین صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم
ماہنامہ منہاج القرآن : جولائی 2008 ء
> ماہنامہ منہاج القرآن > جولائی 2008 ء > نعت بحضور سرورِ کونین صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

نعت بحضور سرورِ کونین صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

ضیاء نیّر
نہیں حسن عمل مجھ میں خطاؤں کے سوا کیا ہے
عطائے رحمت عالم نہ ہو تو پھر عطا کیا ہے

جہاں میں رحمت للعالمینی کے سوا کیا ہے
نہ ہو ان سے وفا تو معنی حرفِ وفا کیا ہے

بڑی سب سے بڑی نعمت خدا کی آپ کی بعثت
نہ اس کو فضل مانا جائے تو فضلِ خدا کیا ہے

بلاوا ہو تو ہو جاتا ہے یاور خود مقدر بھی
مقدر میں کسے معلوم تیرے اے گدا کیا ہے

اگر ہوتے نہ وہ جانِ بہاراں صحنِ ہستی میں
’’یہ کلیاں پھول، غنچے رنگ و بو موجِ صباکیا ہے‘‘

کی خود خلاقِ عالم نے عطا وہ شانِ محبوبی
کہ خود محبوب سے پوچھے خدا تیری رضا کیا ہے

کہاں فردِ بشر کے بس میں ہے اندازہ کر پائے
کہ شان و عظمتِ فخرِ رسل کی انتہا کیا ہے

بس ان کا آسرا ہی دوجہاں میں کام آئے گا
جو ان سے کر دے بیگانہ ہمیں وہ آسرا کیا ہے

میسر ہو بقیعِ پاک میں مدفن مجھے نیّر
یہی اک آرزہ ہے دل میں اس کے ماسوا کیا ہے

^^ اوپر چليں ^^

^^ فہرست ^^

 << پچھلا صفحہ <<

>> اگلا صفحہ >>


This page was published on Jul 1, 2008



کاپی رائٹ © 1980 - 2017 ، منہاج انٹرنیٹ بیورو، جملہ حقوق محفوظ ہیں۔
Web Developed By: Minhaj Internet Bureau